اسلام آباد(وائس آف کشمیر نیوز)یکم دسمبر 2020وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ آزادکشمیر کے بہتے دریا تیل سے زیادہ قیمتی ہیں۔ اس وقت آزادکشمیر میں 2300میگا واٹ بجلی ہائیڈرل سے پیدا کی جارہی ہے۔ چلتے دریاؤں پر لگائے جانے والے پراجیکٹ سے ماحولیاتی مسائل کم ہوتے ہیں۔ پاکستان کے کارخانوں کی چمنیوں سے جو دھواں نکلتا ہے اس کے لیے ہم کشمیریوں نے بہت قربانیاں دی ہیں۔ سکیورٹی آف فوڈز، سکیورٹی آف واٹر، سکیورٹی آف انرجی آپ کی قومی سلامتی میں مرکزی اہمیت رکھتی ہیں۔ اس ملک کا نہری نظام جو اس کو سیراب کرتا ہے اس کے تمام منبے آزاد کشمیر میں ہیں۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر آزاد پتن پراجیکٹ کے معاہدے کی حکومت آزادکشمیر اور چائنیز کمپنی کے درمیان سی پیک کے زیر اہتمام آزاد پتن پراجیکٹ معاہدے پر دستخط کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیر اعظم آزادکشمیر نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ٹرپل ایم منصوبہ اور اقتصادی ترقیاتی زون کے جو منصوبہ جات سی پیک میں شامل تھے ان کو ترجیح بنیادوں پر شامل کیا جائے اور ان پر کام کا آغاز کیا جائے۔ ہمارے یہ جو پانی ہیں یہ بہتا ہوا تیل ہے یہ ضائع نہیں ہوگا ہم امید رکھتے ہیں کہ حکومت پاکستان جو سی پیک کے ترجیح پراجیکٹ ہیں کو بنیادی اہمیت دے گی۔ معاہدہ پر دستخط کی تقریب جموں وکشمیر ہاؤس اسلام آباد میں منعقد ہوئی جس میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقیات اسد عمر، وفاقی وزیر آبی وسائل عمر ایوب، چیئرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ بھی موجود تھے۔ تقریب سے اسد عمر اور عمر ایوب نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر آزادحکومت کے وزیر پاور ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن چوہدری رخسار احمد بھی موجود تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی وترقیات اسد عمر نے کہا کہ حکومت آزادکشمیر کو مبارکباد پیش کرتے ہیں کہ انہوں نے ہائیڈرل کی ترقی کیلئے انہوں نے بہت کام کیا اور یہ منصوبہ بھی ایک بنیادی سنک میل ہے حکومت آزادکشمیر کواس وجہ سے بھی مبارکباد پیش کرتا ہوں کہ نئی ہیومین ڈویلپمنٹ انڈکس پاکی کی آئی ہے اس میں بھی آزادکشمیر نمبر ون ہے اور انہوں نے کہا کہ سی پیک کے خلاف کیے جانے والے پراپیگنڈے کو ناکام بنانا ہے۔ اس سے پہلے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر آبی وسائل عمر ایوب نے اپنے خطاب میں کہا کہ آبی وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے ملکی وسائل میں اہم کردار ادا کرسکیں گے۔ آزاد پتن پاور پراجیکٹ جو سی پیک کے تحت عمل میں لایا گیا ہے اس سے 7سو میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔

27Aqeel Raja and 26 others4 SharesLikeCommentShare