اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کرپشن اور منشیات سے پیسہ بنانے کا نقصان معاشرے کو پہنچا، اس طرح  ناجائز طریقے سے دولت کمانے والوں کو معاشرے کا تسلیم کرنا بدقسمتی ہے۔

اے این ایف ہیڈ کوارٹر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ماضی میں منشیات کے خاتمے سے متعلق اقدامات پر توجہ نہیں دی گئی، افغان جہاد کے وقت پہلی بار پاکستان میں ڈرگز کا سنا، افغانستان سے پاکستان میں منشیات آتی اور آگے جاتی تھی، 80 کی دہائی میں جس نے منشیات سے پیسہ بنایا اس کو غلط سمجھا ہی نہیں گیا، کرپشن اور منشیات سے پیسے بنانے والوں نے معاشرے اور ملک کو نقصان پہنچایا، کرپشن اور منشیات پورے معاشرے کیلئے ناسور ہے،  ماضی میں منشیات اور کرپشن کے پیسے سے کئی لوگ انتخابات بھی جیتے،  ناجائز طریقے سےدولت کمانے والوں کو معاشرے کا تسلیم کرنا بدقسمتی ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں 70 لاکھ افراد منشیات کےعادی بن چکے، گھر میں ایک بھی منشیات کا عادی ہو وہ گھر تباہ کردیتا ہے، افسوسناک خبر یہ ہے کہ ڈرگ آئس تعلیمی اداروں میں پھیل رہی ہے، اور یہ دائرہ یونیورسٹیز تک پھیل چکا ہے، منشیات ڈسپلن کو متاثر کرتی ہے کردار بدل دیتی ہے، صرف پولیس سے جرائم کی جدو جہد نہیں کی جا سکتی، چاہتا ہوں ڈرگ اور کرپشن کے خلاف معاشرہ مل کر لڑے، ہمیں نوجوانوں کو نشے کی لعنت سے بچانا ہے، منشیات فروشی کے خلاف کام کرنا ہوگا۔