مظفرآباد(پی آئی ڈی)
وزیر بلدیات ودیہی ترقی آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر خواجہ فاروق احمد نے کہا ہے کہ آزادکشمیر میں تعلیم یافتہ،ہنر مند اور ضرورت مند افراد کو روزگار کی فراہمی کے لیے بلا سود قرضہ جات کی فراہمی یقینی بنائی جارہی ہے۔بلا سود قرضہ جات سے بے روزگار افراد کو روزگار کی فراہمی میں آسانی میسر آئے گی۔آزادکشمیر سمال انڈسٹریز کارپوریشن کے زیر اہتمام بلا سود قرضہ جات کی فراہمی کی سکیم میں توسیع کریں گے تاکہ زیادہ سے زیادہ افراد کو روزگار کے مواقع میسر آسکیں۔احساس پروگرام کے تحت بھی مستحق گھرانوں کو بلاسود قرضہ جات کی فراہمی کے لیے اقدامات اٹھارہے ہیں۔روزگار کی فراہمی کے لیے بلا سود قرضہ جات کی تمام وفاقی سکیموں کو آزادکشمیر میں بھی لاگو کیا جارہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آزادکشمیر سمال انڈسٹریز اور اخوت کے زیر اہتمام پٹہکہ میں بلا سود قرضہ جات کی فراہمی کے لیے منعقدہ تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ڈائریکٹر سمال انڈسٹریر،تحریک انصاف کے راہنما ملک انصر،خواجہ مدثر،امتیاز اعوان بھی موجود تھے۔بعد ازاں تحریک انصاف کے راہنما امتیاز اعوان کی طرف سے وزیر بلدیات ودیہی ترقی اور دیگر کے اعزاز میں پروقار استقبالیہ دیا گیا۔تقریب کے دوران وزیر بلدیات خواجہ فاروق احمد نے مقامی افراد میں 75,75ہزار روپے کے بلاسود قرضہ جات کے چیک تقسیم کیے۔اس رقم سے مقامی افراد مقامی سطح پر روزگار شروع کرسکیں گے۔انہوں نے کہا کہ اب تک 25سو سے زائد افراد میں 8کروڑ روپے سے زائد کے بلا سود قرضے تقسیم کیے جاچکے ہیں۔حکومت بلا سود قرضہ جات میں توسیع کررہی ہے اور اب ضرورت مند اور بے روزگار افراد کوکاروبار کے لیے 5لاکھ روپے تک کے بلا سود قرضے مہیا کیے جائیں گے تاکہ لوگ باعزت روزگار شروع کرسکیں اور اپنے خاندانوں کی کفالت کرسکیں۔خواجہ فاروق احمد نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت عام آدمی کا معیار زندگی بہتر بنانے کے لیے ٹھوس منصوبہ بندی کے تحت کام کررہی ہے،جن افراد کو بلا سود قرضہ جات دیے جارہے ہیں وہ کاروبار کریں تاکہ رقم ضائع نہ ہو اور کاروبار کے ذریعے وہ اپنے لیے روزگار کو فروغ دیں بہتر کاروبار کرنے والے افراد کو مزید قرضہ جات کی سہولت ملے گی تاکہ وہ کاروبار میں توسیع کرسکیں۔
٭٭٭
مظفرآباد(پی آئی ڈی)30اکتوبر 2021
وزیر بلدیات ودیہی ترقی آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر خواجہ فاروق احمد کا شہر بھر میں محکمہ لوکل گورنمنٹ کے زیر اہتمام نصب واٹر فلٹریشن پلانٹس کا تفصیلی معائنہ،محکمہ لوکل گورنمنٹ کو تمام واٹر فلٹریشن پلانٹس ہمہ وقت درست حالت میں رکھنے اور خراب واٹر فلٹریشن پلانٹس فوری طورپر ٹھیک کرنے کی ہدایت،شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کے لیے تمام تر وسائل بروئے کار لائے جانے کا حکم۔ شہریوں کی شکایات پر وزیر بلدیات ودیہی ترقی خواجہ فاروق احمد نے دارالحکومت مظفرآباد کے مختلف علاقوں میں نصب واٹر فلٹریشن پلانٹس کا تفصیلی معائنہ کیا،پلیٹ ایریا،نیلہ محلہ،اپر پلیٹ،نلوچھی سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کے لیے خطیر لاگت سے جدید واٹر فلٹریشن پلانٹ نصب کیے گئے ہیں جہاں سے شہریوں کو پینے کا صاف پانی مہیا ہوتا ہے۔بعض فلٹریشن پلانٹس کے متعلق شکایات تھیں جس پر وزیر بلدیات نے شہر بھر کا دورہ کرکے پلانٹس کا تفصیلی معائنہ کیا اور محکمہ کو ہدایت کی کہ وہ واٹر فلٹریشن پلانٹس کو ہمہ وقت درست حالت میں رکھے۔اس موقع پر شہریوں سے گفتگو کے دوران ان کا کہنا تھا کہ دارالحکومت مظفرآباد میں 95فیصد قدرتی چشموں کا پانی آلودہ ہے اور زلزلہ کے بعد قدرتی چشمے مزید آلودہ ہوچکے ہیں،مظفرآباد شہر کی آبادی لاکھوں میں ہے،شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی حکومت اور محکمہ لوکل گورنمنٹ کی ذمہ داری ہے۔دارالحکومت کے اندر تمام واٹر فلٹریشن پلانٹس کو اپ گریڈ کیا جائے گا اور شہر کے اندر عوام کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ عوامی ضرورت کے پیش نظر شہر میں مزید واٹر فلٹریشن پلانٹس نصب کیے جائیں گے اور واٹر فلٹریشن پلانٹس کو مستقل بنیادوں پر چلانے کے لیے منصوبہ بندی کے تحت اقدامات اٹھائیں گے تاکہ دارالحکومت میں شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی یقینی ممکن ہوسکے۔
٭٭٭٭